لدائی کہ عمل
  • تاریخ: 2012 اپریل 20

داعی :(دعا کر نے والا )


           
٢۔داعی :(دعا کر نے والا )
بندہ ہر چيز کا محتاج ہے یہا ں تک کہ اپنی حفا ظت کر نے ميں بهی وہ الله کا محتا ج ہے ارشاد ہو تا ہے :
< یَٰاٴَیُّهَاالنَّاسُ اَنْتُمُ الْفُقَرَاءُ اِلَی اللَّہِ وَاللَّہُ هُوَالْغَنِیُّ الْحَمِيْدُ 1
“انسانوں تم سب الله کی بارگاہ کے فقير ہو اور الله صاحب دو لت اور قابل حمد و ثنا ہے ” < وَاللَّہُ الغَنِيُّ وَاَنْتُمُ الْفُقَرَاءُ 2
“خدا سب سے بے نياز ہے اور تم سب اس کے فقير اور محتاج ہو ” انسان کے پاس اپنے فقر سے بہتر اور کو ئی چيز نہيں ہے جو اس کی بار گاہ ميں پيش کر سکے۔ اور الله کی بارگاہ ميں اپنے کو فقير بنا کر پيش کر نے سے اس کی رحمتوں کا نزول ہو تا ہے۔
اور جتنا بهی انسان الله کی بارگاہ کا فقير رہے گا اتنا ہی الله کی رحمت سے قریب رہے گا اور اگر وہ تکبر کر ے گا اور اپنی حا جت و ضرورت کو اس کے سا منے یش نہيں کر ے گا اتنا ہی وہ رحمت خدا سے دور ہو تا جا ئے گا ۔     دعا عند اهل بيت( جلد اول)               محمد مهدی آصفی  
Copyright © 2009 The AhlulBayt World Assembly . All right reserved

Fatal error: Exception thrown without a stack frame in Unknown on line 0